An IIPM Initiative
جمعہ, اگست 1, 2014
 
 

کراچی میں لسانی فسادات کی شکاریمنا

 

MOHAMMAD GHITREEF | Issue Dated: اگست 18, 2011, Noida
 

 

پاکستان کے صوبہ سندھ کے شہر کراچی کا شمار دنیا کی بڑے شہروں میں ہوتا ہے۔ حالیہ دنوں میں کراچی میں لسانی فسادات میں سینکڑوں افراد

ہلاک ہوئے ہیںکراچی میں کئی ماہ سے جاری خوںریز تشدد میں ایک ہی فرقہ کے دومختلف زبانیں بولنے والے افرادکے درمیان ہے۔یعنی

اردوبولنے والے ایک فریق ہیں اورپٹھان دوسرافریق ۔اردو بولنے والی آبادی تقریبا ڈیڑھ کروڑ ہے جبکہ خیبرپختون خواسے آنے والوں کی تعداد

میں اضافہ ہواہے۔ایک اندازہ کے مطابق کراچی میں پٹھانوں کی تعداد پچاس سے ساٹھ لاکھ بتائی جاتی ہے۔دونوں گروپوں کو فساد کا سبب معلوم

نہیں مگردونوں کے لوگ اورخاص طورپر عورتیں اوربچے اس کا شکاربن رہے ہیں ،اوردونوں ہی سیاست دانوں کو اس خراب صورت حال کا

ذمہ دار ٹھیراتے ہیں۔

ایک خاندان ہے یمنا کا جو تیرہ سالہ لڑکی ہے اور یہ لوگ قصبہ کی پہاڑی کے نچلے حصے میں رہتے ہیں۔ اور دوسرا خاندان ہے چھ سالہ

لائبہ کا جو اسی پہاڑی کی چوٹی پر رہتا ہےیمنا کا خاندان اردو بولنے والا ہے۔ یہ وہ افراد ہیں جو ساٹھ سال قبل برِصغیر کے بٹوارے کے بعد

پاکستان آئے تھے۔ دوسری طرف لائبہ کا خاندان پٹھان ہے۔کم سن لائبہ اس باہمی گولی باری کا شکارہوکرمرچکی ہے جبکہ ےمناکی ٹانگ میں

گولی لگی ہے۔


اس مضمون کی ریٹنگ کیجئے:
برا اچھا    
موجودہ ریٹنگ 2.0
Post CommentsPost Comments




شمارے کی تاریخ: نومبر 1, 2012

فوٹو
چینی وزیر دفاع جنرل لیانگ گوآنگلی بھارت کے دورہ پر
چینی وزیر دفاع جنرل لیانگ گوآنگلی بھارت کے دورہ پر
چینی وزیر دفاع جنرل لیانگ گوآنگلی بھارت کے دورہ پر
چینی وزیر دفاع جنرل لیانگ گوآنگلی بھارت کے دورہ پر